دنیائے فٹ بال کے سپر سٹار ز کی پاکستان آمد

دنیائے فٹ بال کے سپر سٹار ز کی پاکستان آمد ( پہلو ۔۔۔۔۔ صابر مغل ) 
فٹ بال دنیا کا سب سے دلچسپ اور مقبول ترین کھیل ہے ایک تحقیق کے مطابق فٹ بال کو دیکھنے یا چاہنے والوں کی تعداد 3.5ارب سے زائد ہے اتنی پذیرائی آج تک فٹ بال کے علاوہ کسی اور کھیل کو حاصل نہیں ہو سکی مگر پاکستان بے پناہ ٹیلنٹ کے باوجود اس حوالے سے بہت پیچھے ہے،عالمی سطع پر فیفاکے اراکین کی209قومی ایسوسی ایشنز میں سے پاکستان 200ویں نمبر پر ہے پاکستان فٹ بال فیڈریشن کے صدر فیصل صالح حیات 30ویں مرتبہ پاکستان فٹ بال فیڈریشن کے صدر ہیں ان کی آخری صدارت کی مدت بھی2019تک ہے شاید یہی ان کی صدارت کی بہترین کارکردگی اور کمال ہے کہ پاکستان دنیا کا ساتواں بڑا ملک ہونے کے باوجود فٹ بال میں زبوں حالی کی انتہاؤں پر ہے مزید تنزلی ہو بھی کیا سکتی ہے ؟ آج بھی ملک کے کونے کونے میں مقامی سطح پر اس کھیل کے پے پناہ پذیرائی حاصل ہے مگر پاکستان میں موجود دنیا کے بہترین ٹیلنٹ کو استعمال کرنے کے لئے منصوبہ بندی کا بد ترین بحران اورفقدان ہے ہم نے اپنے قومی کھیل ۔ہاکی۔کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا ہے ، چند روز قبل پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے سربراہ جنرل آصف غفور نے ٹویٹ میں قوم کو بتایا کہ دنیائے فٹ بال کے سابق سٹار کھلاڑی ،انگلینڈ کے جون ٹیری اور ڈیوڈ جیمز ،برازیل کے روبرٹ و کارلوس،فرانس کے نکولس اینلکا ،فرانس کے روبرٹ پائرس،پرتگال کے لوئس بوامدرتے اور جرمنی کے جارج بواتینک برازیل کے انتہائی شہرت یافتہ کھلاڑی رونالڈینو کی قیادت میں پاکستان کا دورہ کریں گے،ان8مایہ ناز اور عالمی شہرت یافتہ سٹارز کا8جولائی کی صبح اسلام آباد ائیر پورٹ پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ پرتپاک خیر مقدم کریں گے جو اسی دوپہر کراچی پہنچ کر شام سات بجے عبدالستار ایدھی ہاکی سٹیڈیم میں ۔7۔Aسائیڈ میچ میں جلوہ افروز ہوں گے دوسرا میچ 9جولائی کو لاہور کے فٹ بال گراؤنڈ میں منعقد ہو گا اسلام آباد میں ہونے والا میچ منسوخ کر دیا گیاہے،دونوں میچوں میں 4۔4غیر ملکی کھلاڑی دونوں سائیڈز سے میچوں میں حصہ لیں گے،یہ میچ اور انٹرنیشنل سابق فٹ بالرز کی پاکستان آمد برطانوی ۔لیژر لیگ اور پاک آرمی ۔کے اشتراک سے ممکن ہوئی ہے،لیژر لیگ اس وقت دنیا کی سب سے بڑی لیگ آرگنائزیشن ہے جو 5 ۔Aاور4۔Aسائیڈز میچ کرواتی ہے اس کا قیام 2009میں عمل میں آیا جس کا بنیادی مقصد آمدنی کو فلاح و بہبود میں خرچ کرنے کے ساتھ ساتھ مقامی سطح پر چھپے ٹیلنٹ کو سامنے لانا اور اجاگر کرنا ہے،لیژر لیگ اب تک برطانیہ میں ریکارڈ 63لیگ ٹورنامنٹس کا انعقاد کرا چکی ہے اس وقت اس لیگ کے رجسٹرڈ کھلاڑیوں کی تعداد3لاکھ سے زائد جبکہ 3ہزار سے زائد ٹیمیں ہیں ، انگلینڈ اینڈ ویلز کے علاوہ سکاٹ لینڈ ،نادرن آئر لینڈ اورریپبلک آف آئر لینڈ تک محدود رہی 2014میں پہلی بار لیژر لیگ نے انگلینڈ سے باہر امریکہ میں میچ منعقد کرانے کا آغاز کیا،پاکستان آرمی اور لیژر لیگ کے یہ میچ پاکستان میں فٹ بال کے فروغ کے لئے ایک اہم قدم ہے بین الاقوامی کھلاڑیوں کے ان مقابلوں کے دوران نئے ٹیلنٹ کی تلاش کا ایک بہترین موقع ہے پاک فوج کے مطابق معروف فٹ بالرزکا دورہ پاکستان اس بات کا عکاس ہے کہ ملک میں کھیلوں کی سرگرمیاں بحال ہو رہی ہیں پاکستانی قوم امن پسند اور کھیلوں سے محبت کرنے والی قوم ہے اور ملک میں کرکٹ کے بعد اب فٹ بال کے فروغ کی باری ہے آرمی چیف کا یہ اقدام ملک میں کھیلوں کو فروغ دے کر امن کا پیغام دینا بھی شامل ہے ۔پاکستان میں آنے والے سٹارز میں رونالڈینو جو 97انٹرنیشنل میچوں میں برازیل کی نمائندگی کر چکے ہیں جواپنی مہارت ،بال پر دسترس،چابک دستی اور پھرتی میں اپنی مثال آپ تھے ان کا کھیل کسی بھی میچ میں جان ڈال دیتا تھا ،21مارچ1980کو پیدا ہوئے ان کے والد شپ یارڈ ملازم اور مقامی سطح کے فٹ بالر تھے رونالڈینو نے محض 8 سال کی عمر میں فٹ بال کلب جوائن کر لیا وہ سب سے کم عمر اور جوان ۔کلب فٹ بالربنے۔ اوربرازیل کی ورلڈ سطح پر کامیابیوں میں وہ ٹیم کا حصہ تھے انہوں نے برازیل ٹیم کی جانب سے فیفا کنفیڈریشنزکپ(یہ دنیا کی قومی ٹیموں کا ایک بین الاقوامی ایسوسی ایشن فٹ بال ٹورنا منٹ ہے جو فیفا کے تحت ہر چال سال بعدمنعقد کیا جاتا ہے یہ6فیفا وابستہ کنفیڈرینشنز،ایشیائی فٹ بال کنفیڈریشن،افریقی فٹ بال کنفیڈریشن،،کنفیڈریشن آف نارتھ سنٹرل امریکہ اور کیرسین ایسوسی ایشن فٹ بال ،جنوب امریکی فٹ بال کنفیڈریشن،یونین آف یورپین فٹ بال کنفیڈریشن اور اوقیانوسیہ فٹ بال کنٖفیڈریشن ،فیفا عالمی کپ کے فاتحین اور میزبان ملک کے درمیان کھیلا جاتا ہے)کے علاوہ فٹ بال ورلڈ کپ،فیفا چیمپئن شپ،نیشنل کپ،کانٹی نیٹل ٹورنامنٹس میں حصہ لیا،انہوں نے728کلب میچ ،441لیگ میچ،51 نیشنل کپ،134 کانٹی نینٹل میں اپنے جوہر کابھی مظاہرہ کیا وہ اب بھی دنیا بھر میں لیگ میچز کھیل رہے ہیں ۔36سالہ جان ٹیری لندن میں پیدا ہوئے ،FAکپ،لیگ کپ یورپ،فیفا ورلڈ کپ میں حصہ لیا ،سابق انگلش فٹ بال ٹیم کے کپتان PFAمیں 2005میں پلیئر آف دی ائیر کا اعزاز بھی رکھتے ہیں انہوں نے 78انٹرنیشنل جبکہ مجموعی طور پر 733میچوں میں حصہ لیا۔رابرٹ و کارلوس برازیل ٹیم کے مشہور کھلاڑی اور کوچ ہیں جنہوں نے فٹ بال کی تاریخ کا سب سے حیرت انگیز گول کیا،1997میں فرانس کے خلاف فری کک کے ذریعے کیاان کی لگائی کک سے گیند اتنی تیزی سے ہوا میں ٹرن ہوئی کہ فرانس کے گول کیپرفینن بارتھیزایک جگہ کھڑے ہو کر حیرانی سے اسے تکنے لگے فٹ بال کی تاریخ میں ایسی کوئی اور مثال نہیں ملتی ،رابرٹ وکارلوس پاور فل کک کی وجہ سے شہرت کی بلندیوں پر رہے ان کی کک پر گیند کی سپیڈ169کلومیٹر فی گھنٹہ کی ریکارڈ کی گئی ،انہوں نے تین ورلڈ کپ ٹورنامنٹس میں اپنے ملک کی نمائندگی کی،فیفا ورلڈ الیون کا بھی حصہ رہے،برازیل کی قومی ٹیم کی جانب سے125جبکہ کیرئیرمیں مجموعی طورپر575میچوں میں حصہ لیا۔فرانس کے نکولس اینلکاجنہوں نے2014میں متحدہ عرب امارات میں اسلام قبول کیا تو ان کا اسلامی نام عبدالسلام بلال رکھا گیا،انہوں نے50انٹرنیشنل میچوں میں12گول اور دیگر 665میچوں میں210گول کئے وہ شوٹنگ اور موومنٹ کے ماہر تھے ان کی گیند پر بہت دسترس رہتی تھی وہ فارورڈ کھیلتے تھے وہ جرمن ٹیم کے ریگولر ممبر رہے انگلینڈ کے مختلف کلبوں کی جانب سے کھیلا ،وہ ایک مہنگے ترین کھلاڑی کے طور بھی مشہور تھےPFAکی جانب سے ینگ پلیئر آف دی ائیر کا ایوراڈ حاصل کیا،UEFAیورپ اور2001میں فیفا کنفیڈریشن کے کھلاڑی کے علاوہ انڈین اور چائنا کی ٹیموں کے کوچ بھی رہے۔ ڈیوڈ جیمزانگلش ٹیم کے گول کیپر ہوتے تھے انہوں نے چار مرتبہ تمام پریمئیر لیگ میں شرکت کی ،2010کے فیفا ورلڈ کپ کے فائنل میں وہ سب سے طویل العمر گول کیپر تھے انہوں نے کل956میچوں میں حصہ لیا جن میں 53انٹڑ نیشنل میچ شامل ہیں۔رابرٹ پائرس سابق فرانسیسی فٹ بالر ہیں جو ونگز ،اٹیکنگ،اور مڈ فیلڈر تھے رابرٹ کو اہم ترین میچوں میں گول کرنے کے علاوہ تین مرتبہ4۔4اور ایک بار5گول کرنے کا اعزاز حاصل ہے،فیفا ورلڈ کپ،UEFA،فیفا کنفیڈریشن کپ اورFWAمیں حصہ لیاانہیںFWAکی جانب سے پلیئر آف دی ائیر کا ایوارڈ بھی ملا،انہوں نے فرانس کی قومی ٹیم کی جانب سے79انٹر نیشنل میچوں میں شرکت کی اس وقت کوچنگ کرتے ہیں۔پرتگالی کھلاڑی لوئس بوا مورتے4اگست1977کو پیدا ہوئے انہوں نے پریمئیر آرسنل سے اپنے کیرئیر کا آغاز کیاوہ طویل عرصہ تک کھیلتے رہے وہ ونگز،فارورڈ،سینٹرمڈ فیلڈر کے طور پر مشہور تھے،FAکپ ٹورنامنٹ میں چار مرتبہ شرکت کی،رابرٹ نے کل435میچ کھیل کر61گول کئے۔جرمن کے جارج بواتینگ جو اپنے عہد کے نامور کھلاڑے تھے متعدد ٹیموں کی کوچنگ بھی کر چکے ہیں کل276میچوں میں شاندار کارکردگی کا مظاہر ہ کیا۔ان انٹرنیشنل کھلاڑیوں کی پاکستان آمد اور کھیلنا پہلی مرتبہ ہونے جا رہا ہے،پاکستان میں کھیلوں کے حوالے سے بہت ٹیلنٹ ہے مگر ہم اسے اپنی نا اہلیوں ،مناپلی اور اقربا پروری کی وجہ سے استعمال نہیں کر سکے بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح نے پاکستان فٹ بال فیڈریشنPFF کی بنیاد رکھی وہ اس کے پہلے پیٹر انچیف تھے پاکستانی ٹیم نے 1948میں فیفا کی ممبر شپ حاصل کر لی جبکہ ٹیم نے1950میں پہلی مرتبہ ایران اور عراق کا دورہ کیا،1954میں فٹ بال ٹیم نے منیلا میں منعقدہ ایشین گیمز میں حصہ لیا،پاکستان ایشین فٹ بال کنفیڈریشن (جس میں شامل ممالک کی تعداد47ہے 6مغربی ایشیا،6سنٹرل ایشیا،7 جنوبی ایشیا،10مشرقی ایشیااور12جنوب مشرقی ایشیا کی ٹیمیں شامل ہیں ) ایشین فٹ بال کنفیڈریشن کا ممبر بھی ہے،پاکستان ساؤتھ ایشین گیمز 4 سیف گیمز میں 1 اور1954میں کولمبو کپ جیت چکا ہے(پاکستان کے پاس صرف یہی واحد انٹرنیشنل کپ ہے)،پاکستان میں ہونے والے نیشنل فٹ بال کپ میں 16ٹیمیں حصہ لیتی ہیں KRLاس ایونٹ کو 6بار اپنے نام کر چکی ہے،پاکستان میں ہونے والے دیگر ٹورنامنٹس میں نیشنل چیمپئین شپ،پی ایف ایف پریذیڈنٹ کپ،پاکستان انٹر ڈیپارٹمنٹل چیمپئین شپ،نیشنل ڈیپارٹمنل چیمپئین شپ اورانٹر پرونشل چیمپئین شپ شامل ہیں جن کی باقاعدگی بڑی حد تک کم ہو چکی ہے۔پاکستان میں مختلف اداروں کی فٹ بال ٹیمیں ہیں جن میں نمایاں مقام واپڈا،خان ریسرچ لیبارٹریز،آرمی،کے الیکٹرک اور ائیر فورس کی ٹیمیں شامل ہیں،ان میں سے قومی ٹیم کے لئے منتخب کھلاڑیوں میں مزمل حسین،ثاقب حنیف اور احسان اللہ (گول کیپر)ذیشان رحمان،محسن علی،احسان اللہ،محمد بلال،محمد احمد ،نذیر احمد ،امجد حسین ،محمد سفیان آصف،شہباز یونس اور نبیل اسلم (ڈیفینڈرز)،محمد خان،محمد عادل،بلال الرحمان،محمد ریاض اور محمد توصیف (مڈ فیلڈرز)سعداللہ ،صدام حسین ،منصور خان،حسن نوید بشیر ،حبیب الرحمان (اٹیکرز)جبکہ تنویر احمد،حسن بلوچ،زاہد تاج اور اصغر خان انجم کوچ ہیں،پاک فوج کی اس کاوش سے قوی امید ہے کہ پاکستان میں فٹ بال کے کھیل کو ضرور فروغ حاصل ہو گا۔پوری قوم پاکستان آمد پر ان بین الاقوامی شہرت یافتہ سپر سٹارز کو خوش آمدید کہتی ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com