ہمدردی یا محض ذاتی مفاد

ہمدردی یا محض ذاتی مفاد
تحریر : ایف اے وڑائچ
تقریباََ پاکستان میں موجود ہر شخص کو ہی معلوم ہے کہ اس وقت ملک کے حالات کس قدر ناساز گارہیں تمام سیاسی جماعتیں صرف اسی مہم پر سر جوڑ ے ہو ئے ہیں کہ کسی طرح مسلم لیگ ن کی حکومت خیرآباد کہہ دے۔حال ہی میں بلوچستان کے وزیر اعلیٰ پر’’ تحریک عدم اعتماد‘‘کو سامنے رکھتے ہوئے دباؤ ڈالا گیا۔ لیکن وزیر اعلیٰ بلوچستان ’’ تحریک عد م اعتماد ‘‘اسمبلی میں آنے سے پہلے ہی مستعفی ہو گئے انہی حالات میں قصور کے علاقہ صدر میں ایک دل دہِلا دینے والا آبرو ریز سانحہ پیش آیا۔ جس میں ایک سات سالہ معصوم بچی زینب کے اغوا کے بعد پولیس شہادتوں اور سی سی ٹی وی فوٹیج ملنے کے باوجود بچی کو بازیاب نہ کروا سکی تھی تاہم بروز منگل اس معصوم سات سالہ بچی کی لاش کچرے کے ایک ڈھیرسے برآمد ہوئی اس واقعے کے رونما ہونے کی ہی دیر تھی کہ چند سیا ستدانوں کو پنجاب حکومت پر الزام تراشی کا ایک اور موقع مل گیا اور انہوں نے اس بچی کو پاکستان بھر کی بیٹی نہ سمجھا۔ انصاف دلانے اور مجرم کو کیفرِ کردار تک پہنچانے کی بجائے اس واقعے کوپنجاب سے منسوب کرتے ہوئے معصوم زینب کو صر ف پنجاب کی ہی بیٹی سمجھا اور پنجاب حکومت کو سخت تنقیدکا نشانہ بنایا جس کا مقصد عوام کو مشتعل کرکے حکومت پر دباؤ ڈالنا ہے جبکہ ہرسیاستدان کو چاہیے کہ وہ اپنی تمام ہمدردی اور پوری توجہ کا مرکز زینب اور اس کے گھر والوں کو انصاف دلانے کی طرف بنائے نہ کہ اس سانحہ سے فائدہ اٹھاتے ہوئے اپنی سیاست چمکائے ذرا سوچئے کہ ایک معصوم بچی ایک سے زائد دفعہ زیادتی کے بعد قتل ہونے تک کس قدر تکلیف سے گزری اس درندے صفت انسان سے ڈرتے سہمتے ہوئے نہ جانے کیا کیا کلمات اس معصوم کے منہ سے نکلے ہونگے اس معاملے کو پسِ پشت ڈالتے ہوئے احساس کیے بغیر ،مذاق بنایا جارہا ہے خدارا ! اس معصوم کو اپنی بیٹی سمجھتے ہوئے اپنی پوری توجہ زینب اور اس کے گھروالوں کو انصاف دلانے پر مرکوز کریں خدارا درندہ صفت لوگوں کو عبرت کا نشان بنایا جائے تاکہ آئندہ پاکستان میں ہر زینب کی عزت محفوظ رہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com