فقیر عز ت شاہ وا رثی چھپر شر یف 

ضیغم سہیل وارثی 
فقیر عز ت شاہ وا رثی چھپر شر یف 
ہر سال ستمبر میں چھپر شر یف میں فقیر عزت شا ہ وا رثی رحمتہ اللہ علیہ کا عر س ہو تا ہے ۔ چھپر شر یف دربا رگو جر خاں میں ہے ، یہی وارثیہ سلسلہ دہلی انڈ یا میں ہے ، چھپر شر یف گو جر خاں میں خا فظ اکمل شا ہ وا رثی صا حب کا اور فقیر عز ت شا ہ وا رثی صا حب کا مز ار مو جو د ہے ، 
فقیر عزت شاہ وا رثی نے سا گر ی ہا ئی سکول را ولپنڈ ی اور پنجا ب یو نی ورسٹی سے اعلی تعلیم حا صل کی ، اجمیر شر یف کا سفر ، فقیر عزت شا ہ وا رثی صاحب جب میٹر ک میں تھے تب سا گر ی کو چھو ڑ کر دہلی انڈ یا کے سفر پر روانہ ہو ئے ، وہاں پر ان کی ملا قا ت مجذ وب درویش یسین صا حب سے ہو ئی فقیر عزت شا ہ وا رثی صا حب نے خو اجہ غر یب نواز کے دربار پر ڈیو ٹی دی، اس دورا ن تفسیر قر آ ن پا ک کی تعلیم خا فظ نو ر الحسن سے حاصل کی ، ایک دن خو اجہ حسن امام چشتی نے فقیر عزت شا ہ وارثی صا حب کو بتا یا کہ آ پ کی یہاں ڈیو ٹی ختم ہو گئی ، اور آپ دیو ہ شر یف جا ئیں ، یہ تما م سفر گیا رہ ما ہ اور بیس دن تھا ۔ 
دیو ہ شر یف کا سفر ، فقیر عز ت شا ہ وارثی دیو ہ شر یف گے ، وہاں پر ان کی ملا قا ت ان کے انکل احمد شا ہ وارثی صا حب سے ہو ئی ، وہاں پر اوگھٹ شا ہ وارثی صا حب سے ملا قات ہو ئی ، جو وا ثی سلسلہ سے تھے ، گھر وا پسی کا سفر ، سال کے بعد فقیر عزت شا ہ وا رثی سنگھو ئی پہنچے اور تعلیم کو سلسلہ مکمل کیا ۔ چھپر شر یف کا سفر ، جب خا فظ اکمل شا ہ وارثی صا حب اس دنیا سے پر دہ فر ما گے تب فقیر عزت شا ہ وا رثی صاحب ہی ایک فیملی میں سے تھے وہاں پر ، اور نما ز جنا زہ میں چھپر شر یف پہنچے ، حا فظ عبد اللدشا ہ وا رثی صا حب کے پر دہ فر ما نے کے بعد آ ستا نہ شر یف میں ا حرام پو ش نہیں تھے ، سر کار عا لم نے فقیر عز ت شا ہ وارثی صا حب کو احرام کا تحفہ دیا دیا ، اس کے بعد فقیر عز ت شا ہ وارثی صا حب نے خا فظ اکمل شاہ صاحب کے مز ار کا کا م شر وع کر وایا ، اور اعلان کیا گیا کہ دیو ہ شریف پا کستان میں، فقیر عز ت شاہ وا رثی صاحب ۴۸سال چھپر شر یف رہے ہیں ، فقیر عزت شا ہ وا رثی صا حب وا رثیہ سلسلہ کے عظیم سکا لر تھے ، اسلا می آ ئیڈ لو جی کو نسل کے ممبر رہے ہیں جنرل ضیا ء نے فقیر عزت شا ہوارثی صا حب سے اسپشل درخو است کی تھی ، تد ریس کے سلسلے میں کا م کے لیے خا ص طور پر فقیر عز ت شا ہ و ارثی صا حب نے تو جہ دی تھی ، ان کی مو جو دگی میں بہت سے مقاما ت پر سکول اور درس گا ئیں تعمیر کر وا ئی گئی تھیں ، اور ان کے تمام اخر اجا ت چھپر شر یف کی انتظا میہ کے ذ مے ہیں ، فقیر عز ت شا ہ وا رثی صا حب سا ت ستمبر ۲۰۰۴ کو دنیا سے پر دہ فر ما گے ،فقیر عز ت شا ہ وار ثی صا حب کی پید ائش ۰۹ نو مبر ۱۹۲۵ میں جہلم کے علا قے سنگو ئی میں ہو ئی ، ان کے وا لد کا نا م قا ضی محمد یو سف قا دری سر وری ، فقیر عزت شا ہ وا رثی صا حب نے ور ثیہ ٹر سٹ کی بنیا د رکھی ، اس ٹر سٹ کے ذ ریعے تعلیم گا ئیں اور چھپر شر یف میں ایک ہسپتال بنا یا گیا ، ان سب اداروں کی نگرا نی اس ٹر سٹ کے ذمہ ہے ، چھپر شیر یف ہسپتال میں مکمل فر ی علا ج کیا جا تا ، گو جر خاں کے نو احی علا قہ بیول میں فقیر عز ت شا ہ وا رثی صا حب نے یہ راز بتا یا تھا کہ یہاں جو مز ار ہے ، یہ مز ار صحا بی رسول جعفر بن زیا د مکی کا ہے ، اس اعلان کے بعد وا رثی ٹر سٹ کی زیر نگر انی بیول کے اس علا قہ میں صحا بی رسول کی قبر مبا رک پر مزا ر کی تعمیر کا کا م شر وع کیا گیا جو اب مکمل ہو چکا ہے ۔ ہر سال پو رے پا کستان اور انڈ یا سے سے لو گ چھپر شر یف عر س میں شامل ہو نے کے لیے آ تے ہیں ، یہ عر س تین دن جا ری رہتا ہے ، تین دن لنگر عام جا ری رہتا ہے ، سا را انتظا م وا رثیہ ٹر سٹ کے ذمے ہو تا ہے ، عر س کے مو قع پر ملک کے مشہور نعت خواں اور قوال چھپر شر یف تشر یف لا تے ہیں ، اکثر ہم سے پو چھا جا تا ہے کہ آ پ اپنے نا م کے سا تھ وا رثی کیوں لکھتے ہیں تو ان کو یہاں پر بتا تا چلوں کے جو بھی ان وا رثی صا حب کے بیعت لیتا ہے وہ اپنے نام کے سا تھ وا رثی لکھتا ہے ، کچھ مر ید لکھتے ہیں کچھ نہیں لکھتے یہ ان کی اپنی مر ضی پر ہے ، بیدم وا رثی ، مظفر وا رثی بڑ ے نام گزر ے شا عر ی میں ، ملک کی صو رت حا ل ایسی ہے کہ امن کی فضا ء قا ئم ہو نی چا ہیے ، اس مقصد کے لیے ہشت گر دی مزا روں پر دہشت گر دی کے وا قعا ت کر کے آ پس میں نفر ت پید ا کر نے کی کو شش کر تے ہیں ، ہما ری حکو مت کی ذمہ داری کے وہ ان مقا مات پر مکمل سیکو رٹی فر اہم کر ئے ۔
 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com