آخری روزہ تھا اور ، روز بھی اتوار تھا

سانحہ ء احمد پور شرقیہ ،بہاولپور(25 جون 2017ء ) پر خصوصی نظم
آخری روزہ تھا اور ، روز بھی اتوار تھا
گرم جب انسانیت کی موت کا بازرارتھا
ایک پل میں درجنوں انساں کوئلہ بن گئے
ہم پہ اپنے رب کی ناراضی کایہ اظہار تھا
آئل ٹینکر سے بہاجو تیل تھا،وہ خون تھا
آگ کا دریاتھا ، شعلوں سے بھرا کردار تھا
بد نصیبی اور بد بختی کی دیکھی انتہا
اپنے ہاتھوں موت لینے ہر کوئی تیار تھا
ایک سگریٹ پھینکنے کی دیر تھی پٹرول پر
جل گئے بچے ، بڑے لاشوں کا ایک انبارتھا
عید سے پہلے قیامت دیکھ لی ہے اس لیے 
عید پر کہنا ’’مبارک ‘‘دوستو بیکار تھا
جلنے والے جل چکے تھے اور جو زخمی ہوئے
ہسپتالوں میں علاج ان کا بہت دشوار تھا
اس طرح کا آنکھ نے منظر کبھی دیکھا نہ تھا 
اس لئے ہر ایک لب پہ صرف استغفار تھا
کونسی ہے انکوائری اور کیسا واقعہ ؟
کیا پتہ ہے کون مجرم ، کون ذمہ دار تھا؟
پاک فوج اور امدادی اداروں کامگر
خدمتِ انسانیت میں کام شاندار تھا
کوئی تو غربت ، جہالت ختم کرتا دیس سے
بس مجھے کرنا تھا فاروقی ؔ یہی اظہار تھا
ولایت احمد فاروقی، لاہور 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com