بجٹ منظور ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے

بجٹ منظور ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
میَں ہور وی مجبور ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
مُرغی دی تیز ہوئی چال
میری پھیکی رہ گئی دال
وچھایا سرکار کیسا جال
سر تو اُڈ گئے میرے وال
اب میَں اس سے زیادہ کیا کہوں
میَں شیدا ٹلی ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
بجٹ منظور ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
گلاں دے وار نہ کر نیں
سانوں ہور بیمار نہ کر نیں
دل ہو گیا نیں بے قابو
ہائے چل گیا بجٹ دا جادُو
دل نِکل کے ساڈا او گیا ہُن کی کریے کی کریے
بجٹ منظور ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
پہلے ای کیہڑی کٹ سی
جیہڑی جیب دے اُتے ودھ سی
ہُن کیہڑے پاسے جاواں
میَں منجی کتھے ڈاواں
نہلے پہ دہلا ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
بجٹ منظور ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
میک اپ کر دتا جے مہنگا
ہن ہتھ آندا نیءں جے لہنگا
بُڈی وی رُس رُس وکھاوے
خرچ ودھان لئی پریشر پاوے
اب میَں اس سے زیادہ کیا کہوں
میَں ہور کنگال ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
بجٹ منظور ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
اپنے ای خزانے بھر دے
ساڈا خیال نہ کر دے
ہزار روپیہ جے ودھایا
سمجھو میں کجھ نئیں کمایا
تنخواہ ودھا کے اوگیا ہُن کی کریے کی کریے
بجٹ منظور ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
ہُن کیہڑی گل دا شکوہ
ٹھپ دِتا ای میرا مکوہ
کانوں روائی جانویں
پلکاں نُوں سُجائی جانویں
جو ہونا سی او ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
بجٹ منظور ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
میَں ہور وی مجبور ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے
اب میَں اس سے زیادہ کیا کہوں
عرفان شیدا ٹلی ہو گیا ہُن کی کریے کی کریے

شاعر:ایم عرفان

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com