ظاہر پرست : ساحل سلیم

Sahil Azeem

یہ جو، ظاہر پرست پھرتے ہیں
اپنا باطن ــ کہاں دکھائیں گے
ان کا ــــــ باطن جو ہو گیا ظاہر
پھر یہ ظاہر کہاں چھپائیں گے

 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com