اشعار

بدل بدل کے جلائے ہیں طاقچے میں دیے : ہاشم علی خان ہمدمؔ

بدل بدل کے جلائے ہیں طاقچے میں دیے ہوا کی پیاس بجھے نہ بجھے مجھے ...

Read More »

میرے ہونے کا پتا دیتی ہیں : سلیم کاوش

میرے ہونے کا پتا دیتی ہیں میری جانب تیری مائل آنکهیں سلیم کاوش Share

Read More »

یہ تجاھل کہ تغافل ھے تکاسل میرا : ثاقب ھارونی

یہ تجاھل کہ تغافل ھے تکاسل میرا رخت باندھا نہ گیا مجھ سے سفر ھونے ...

Read More »

میں ایک اور محبت بھی کرنے والا ہوں : احسان شاہ

میں ایک اور محبت بھی کرنے والا ہوں کہ مجھ سے ہوتا نہیں ایک کام ...

Read More »

بیٹھ کر بات کیوں نہیں کرتے؟ : الماس شبی

بیٹھ کر بات کیوں نہیں کرتے؟ کوئی صورت نکل پڑے شاید  الماس شبی Share

Read More »

ہم سے کیا پوچھنے آئے ہو، ہمیں کیا معلوم : اُسامہ مرزا

Share

Read More »

اوروں کی مدد کرتا ہے تُو خوب ہے لیکن : حسیب اعجاز عاشر

Share

Read More »

زندگی کے لیے بس نانِ جویں کافی ہے : عزیز بلگامی

زندگی کے لیے بس نانِ جویں کافی ہے سودخواروں کے نظاموں سے بغاوت کی ہے ...

Read More »

اس کی گلی کی خاک بنا دے : سعدیہ صفدر سعدی

Share

Read More »

کرنے لگے ہیں لوگ : صباحت عاصم واسطی

کرنے لگے ہیں لوگ اندهیرے میں بندگی مسجد میں اک چراغ جلانے کا حکم دے ...

Read More »
Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com