روداد ادبی اجلاس حلقہ، ماہ اکتوبر 2017م

روداد ادبی اجلاس حلقہ، ماہ اکتوبر 2017م

حلقہء ادب اسلامی۔قطر کا ماہانہ ادبی اجلاس حسب روایت دوسری جمعرات بتاریخ 12 اکتوبر 2017ء کی شام منعقد ہوا.

اجلاس کی صدارت رکن حلقہ اور دنیائے اردو ادب کی معروف شخصیت افتخار راغب نے کی، جبکہ اجلاس کے مہمانِ خصوصی رکنِ حلقہ بشیر عبد المجید عمری رہے اور مہمانِ اعزازی وزیر احمد وزیر، (جو کسی ناگہانی حادثہ کے سبب حاضر اجلاس نہیں ہوسکے) اجلاس کے دونوں حصوں (نثر ونظم) کی نظامت عامر شکیب نے انجام دی.

اجلاس کا آغاز رکن حلقہ حافظ عبد الرحمن شمسی  کی تلاوت کلام پاک سے ہوا، حلقہ کے جنرل سکریٹری محترم مصطفٰی مزمل (ٹیچر آئڈیل انڈین سکول قطر) نے افتخار راغب کے مجموعۂ کلام ''یعنی تو'' سے حمدیہ کلام کو اپنی مترنم آواز میں سنایا.

ناظم اجلاس نے مہمانوں کے تعارف کے ساتھ  تمام حاضرین کا استقبال کیا.

صدرِ اجلاس کا تعارف کچھ اس طرح کا رہا: افتخار راغب صاحب کا پورا نام افتخار عالم راغب ہے. آپ کا تعلق ہندوستان کی ریاستِ بہار کے ضلع گوپال گنج سے ہے. سیوان سے میٹرک، پٹنہ سے انٹرمیڈیٹ اور جامعہ ملیہ اسلامیہ نئی دہلی سے سول انجنئیرنگ میں بی ٹیک کیا اور ۱۹۹۹ میں قطر چلے آئے. آپ نے محض تیرہ سال کی عمر میں شاعری کا آغاز کیا، اب تک آپ کے چار مجموعہء غزلیات "لفظوں میں احساس" ،"خیال چہرہ"، "غزل درخت" اور "یعنی تو" منظر عام پر آچکے ہیں. جب کہ آپ کی مزاحیہ شاعری کا مجموعہ زیرِ ترتیب ہے.

مارچ ۱۹۹۹م میں قطر آنے کے دو تین ماہ بعد ہی آپ بزمِ اردو قطر اور حلقہ ادب اسلامی قطر سے وابستہ ہو گئے، بلکہ حلقہ میں آپ پانچ سال تک بطور جنرل سکریٹری رہ چکے ہیں اور تا حال مجلس مشاورت کے رکن ہیں.

آپ کا شمار قطر کے فعال ادبی شخصیات میں ہوتا ہے. جو اپنی عمدہ شاعری اور منفرد رنگ و آہنگ کی وجہ سے آج پوری اردو دنیا میں اپنی شناخت قائم کر چکے ہیں.

آپ کی ادبی خدمات کے اعتراف میں مختلف تنظیموں نے انعامات واعزازات نیز سپاس ناموں سے بھی نوازا ہے.

مہمانِ خصوصی کے تعارف میں کچھ اس طرح  کا تذکرہ آیا : بشیر عبد المجيد  جامعہ دار السلام سے عالمیت اور فضیلت کے بعد مدراس یونیورسٹی سے ادیب فاضل پهر مسلم یونیورسی علیگڑھ سے ادیب کامل کے امتحانات پاس کئے.

معاش کے لئے 1992 میں دوحہ تشریف لائے 6 سال امامت کے بعد  پچھلے 20 سال سے وزارت داخلیہ میں مترجم (موظف اداری) کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے ہیں.

شاعری میں آپ کو بہت پہلے سے دلچسپی رہی، مگر باقاعدہ اس کی شروعات ایک سال پہلے ہو سکی تھی.

حسبِ روایت اجلاس کے نثری حصے میں دو مضامین پیش  کئے گئے، جو حسنِ اتفاق سے علامہ اقبال کی شاعری سے متعلق رہے، پہلا مضمون محترمہ قمر جبین صاحبہ (مسز مرحوم عرفان شمسی) نے بعنوان: '' امومت: علامہ اقبال کی نظر میں'' پیش کیا.

مضمون کا آغاز علامہ اقبال کے اس شعر سے ہوا:

وجودِ زن سے ہے تصویرِ کائنات میں رنگ

اسی کے ساز سے ہے زندگی کا سوزِ دروں

 مقالہ نگار نے کہا کہ علامہ کے ہاں فلسفۂ اجتماعیت میں عورت کے وظیفہء امومت کی بڑی اہمیت ہے، جو اپنی فطرت میں شان رحمتِ خداوندی رکهتی ہے اور اس جذبے کی حفاظت عین اسلام ہے.

اقبال عورتوں کو ان کے اصل فریضہء نسائیت یعنی امومت کی طرف بھرپور انداز میں توجہ دلاتے ہوے نظرآتے ہیں، اور یہ کہ خود جب اپنی والدہ مرحومہ کی یاد میں نظم لکهتے ہیں تو جہاں ماں کی دیگر خصوصیات  کا تذکرہ کرتے ہیں وہیں امومت اور تربیت کے جوہر کو نمایاں  کرکے پیش کرتے ہیں جو کسی عورت  کا طرہء امتیاز ہے.

جامع اور دلنشین  اسلوب سے مزین اس مقالہ کی سامعین نے کهل کر پذیرائی کی.

آج کا دوسرا مضمون ڈاکٹر عبد السلیم صاحب نے بعنوان: '' کلامِ اقبال میں قرآنی آیات واشارات'' پیش کیا. جس کی ابتدا اقبال مرحوم کے اس شعر سے تهی:

ایماں کی حفاظت تجهے مطلوب اگر ہے

قرآن میں ہو غوطہ زن اے مردِ مسلماں

مقالہ نگار نے علامہ مودودی کی زبان میں کہا کہ فہمِ قرآن میں غوطہ زنی کا جوعالم علامہ اقبال کے ہاں ملتا ہے وہ کسی اور مفکر اور شاعرِ إسلام میں نہیں ملتا.

اس کی واضح  دلیل علامہ کا اپنے کلام میں مسلم ملت کو اس کی غفلت سے  جگانے کے لئے جابجا اسی کا حوالہ دیتے ہوے نظر آنا ہے: جیسے ایک موقع  پر فرماتے ہیں.

وہ زمانے میں معزز تهے مسلماں ہوکر

اور تم خوار ہوے تارکِ قرآں ہوکر

مضمون چونکہ مفصل تھا اس وجہ سے باقی حصے کو اگلے اجلاس میں پیش کرنے کے وعدہ کے ساتھ مقالہ نگار نے حاضرین سے اجازت چاہی، اس موقر مقالہ کی سامعین نے کهل کر حوصلہ افزائی فرمائی.

 

یہ اجلاس ایک اعتبار سے یادگار اور منفرد نوعیت کا حامل رہا، وہ اس طرح کہ اجلاس کے نثری حصے کے اختتام پر حلقہ کے معزز رکنِ رکین اور دوحہ کی تمام انجمنوں میں معتبر مانے جانے والے شاعر افتخار عالم راغب کے چوتهے مجموعۂ کلام *یعنی تو* کی اشاعت پر ایک مختصر تقریبِ  پذیرائی کا انعقاد عمل میں آیا، جس میں حلقہ کے سرپرست محترم سید محی الدین شاکر نے صدرِ حلقہ عامر شکیب، نائب صدر ڈاکٹر عبد السلیم، حلقہ کے سابق صدر ڈاکٹر عطاء الرحمن، شرکاء اجلاس میں سے دوحہ کی مختلف ادبی انجمنوں کے نمائندوں (خالد داد خان، شاد اکولوی، اعجاز حیدر) کو شریک کرتے ہوے حلقہ کی جانب سے اس کتاب کی اشاعت پر تہنیت اور مبارکبادی کے نقش کنندہ کلمات پر مشتمل ایک مومنٹو پیش کیا.

حاضرین نے اپنی زوردار تالیوں سے محترم افتخار عالم راغب کو خوب داد و تحسین سے نوازا۔

اس مختصر مگر دلچسپ تقریب کے بعد 15 منٹ چائے نوشی کے لئے وقفہ رہا.

بعد وقفہ، شعری نشست کے آغاز پر رکن حلقہ محترم شاد آکولوی نے ناظم اجلاس سے اجازت لیکر حلقہ کے قدیم ترین رکن اور قطر کی معروف ادبی شخصیت ڈاکٹر خلیل الرحمٰن راز کے مادرِ وطن میں انتقال کی افسوسناک خبر سنائی، اور مختصراً خراجِ عقیدت پیش کیا.

اللہ مرحوم کو غریقِ رحمت فرمائے.

اس مناسبت سے ناظمِ  اجلاس نے اس بات کی خواہش ظاہر کی کہ اگلے اجلاس میں مرحوم کی شخصیت اور ان کی خدمات کو بهر پور انداز میں اجاگر کیا جائے.

بعد ازاں اجلاس کا شعری حصہ شروع ہوا جس میں دوحہ کے حاضر شعراء (شاد اکولوی، افتخار راغب، سید فہیم الدین، اعجاز حیدر، مظفر نایاب، سعادت علی سعادت، وصی الحق وصی، راقم اعظمی، بشیر عبد المجید، شاہد سلطان اعظمی، عبد الوکیل احمد) نے اپنے کلام سے سامعین کو خوب محظوظ  کیا.

اجلاس کے آغاز سے لیکر اختتام تک صدرِ اجلاس کے مجموعۂ کلام کی پذیرائی  کا ایک عمل اس طور بهی برقرار رہا کہ *یعنی تو* ردیف والی غزل کا ایک ایک شعر ہر شاعر کو سٹیج پر دعوت دینے سے قبل سنایا جاتا رہا.

شہ نشین سے تاثرات:

اجلاس کے اختتام پر مہمان خصوصی نے اپنے تاثرات میں حلقہ کے ذمہ داروں کا شکریہ ادا کیا اور اجلاس کی کارروائی  کی تعریف کی.

جب کہ صدرِ اجلاس نے اپنی تاثراتی گفتگو  میں حلقہ کے ذمہ داروں کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ ان کی اطلاع  کے بغیر حلقہ نے آج کے اجلاس میں یہ  تقریب رکھ  کر انہیں حیران کردیا ، بعد ازاں موصوف نے اجلاس پر تفصیل سے مگر مفید و دلچسپ تبصرہ فرمایا.

اجلاس کے اختتام پر ناظم اجلاس نے مہمانوں، دوحہ میں سرگرم ادبی اداروں کے ذمہ داروں اور ادب نواز حاضرین اجلاس کا تہہ دل سے شکریہ ادا کیا.

یوں تقریباً شب کے 11:45 بجے حلقہ کا ایک اور کامیاب اجلاس اللہ کے فضل سے کامیابی کے ساتھ اختتام پذیر ہوا، اور حسب روایت یادگار تصویر لی گئی۔

رپورٹ: عامر شکیب

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com