جشنِ عباس تابش اور کُل خلیج مشاعرہ

 جشنِ عباس تابش اور کُل خلیج مشاعرہ

رپورٹ: سید تابش زیدی(دبئ)

پاکستان ایسوسی ایشن دبئ اور بزمِ اردو کی جانب سے اردو کے معروف شاعر عباس تابش کے اعزاز میں جشن اور کل خلیج مشاعرے کا اہتمام کیا۔ یہ پرگرام اپنی نوعیت کا پہلا پروگرام تھا جس میں دونوں ادبی اور سماجی تنظیموں نے مل کر کام کیا۔ پروگرام ۲

۱ اکتوبر ۲۰۱۷ کو پاکستان آڈیٹوریم دبئ میں منعقد ہوا۔ مشاعرے میں پاکستان، ہندوستان، اور عرب امارات سمیت بحرین، کویت، اور سعودی عرب سے شعرائے کرام نے شرکت کی۔

پروگرام کےآغاز میں پاکستان ایسوسی ایشن کے کلچرل سیکرٹری طارق رحمان نے مہمانوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے پاکستان ایسوسی ایشن دبئ کی کلچرل کمیٹی کی ادبی سرگرمیوں کا تعارف کروایا اور بزمِ اردو کی ادبی خدمات کو سراہا۔

پروگرام کی نظامت کی ذمداری معروف سٹیج اداکارشرافت علی شاہ نے انجام دی۔

پرگرام کے پہلے حصّے جشنِ عباس تابشؔ میں جناب عباس تابشؔ حاضرین سے روبرو ہوئے۔ سید تابش زیدی نے عباس صاحب کی زندگی اور شاعری کی کے متعلق دلچسپ سوالات پوچھے۔ ریپڈ فائر راونڈ میں عباس صاحب نے ہر سوال کا جواب اپنے ایک شعر سے دیا۔ جسے حاضرین نے بہت پسند کیا۔ آخر میں اس سوال کے جواب میں کہ اگر آپ شاعر نہ ہوتے تو کیا ہوتے؟ عباس صاحب نے فرمایا کہ   

 سکوتِ دہر رگوں میں اُتر گیا ہوتا

 اگر میں شعر نہ کہتا تو مر گیا ہوتا۔

معروف شاعر اور ادیب جناب ظہورالسلام جاوید نے عباس تابش کی شاعری اور حالاتِ زندگی پر روشنی ڈالی۔ 

پروگرام کے دوسرے مرحلے سے قبل بزمِ اردو کے بانی اور جنرل سیکرٹری ریحان خان نے عباس تابش مھمانوں اور پاکستان ایوسی ایشن دبئ کا شکریہ ادا کیا اور طارق رحمان اور انکی ٹیم کو خراجِ تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ پیڈ کی اردو ادب اور شاعری کے فروغ کیلئے کی جانے والی کاوشیں قابلِ ستائش ہیں۔

کل خلیج مشاعرے کی نظامت کی ذمہ داری  معروف ادیبہ اور شاعرہ ثروت ذہرہ نے بخوبی انجام دی۔ مشاعرے کی صدارت کے فرائض ظہورالسلام جاوید نے نبھائے جبکہ مھمانِ خصوصی عباس تابش اور مھمانانِ اعزازی کے طور پر شوکت فہمی اور محشرآفریدی نے شرکت فرمائ۔ 

مشاعرے میں شریک دیگر شعرائے کرام میں مہتاب قدر، خالد سجاد، عادل احمد، فرہاد جبریل، آصف رشید اسجد، سلیمان جاذب، سرور نیپالی، سید سروش آصف، احیابھوجپوری اور عائشہ شیخ عاشی شامل تھے۔ مشاعرے کی خاص بات اسکا وقت پرآغاز اور اختتام تھا۔ شائقینِ اردو نے تمام شعرائے کرام کو محبتوں اور داد سے نوازا ۔ عباس تابش کی شاعری نے محفل میں چار چاند لگا دئیے۔

مشاعرے کے اختتام میں بزمِ اردو نے پاکستان ایسوسی ایشن دبئ کو لوحِ سپاس پیش کیا۔ اور تمام شعرائے کرام کو بھی یادگاری شیلڈز پیش کی گئیں۔

پروگرام کو پیڈان فوکس کی ٹیم نے فیس بک پہ براہِ راست نشر کیا۔ پاکستان ایسوسی ایشن دبئ کے رضاکاروں نے پروگرام کوانتہائ منظم اور پروقار بنانے میں انتھک محنت کی۔

 دبئ کی ادبی فضاوں میں جشنِ عباس تابش کی مہک ابھی تازہ ہے۔

روبرو عباس تابش کے ساتھ 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com